انتہا___________ از صوفیہ کاشف

بل کھاتی ندیوں کے ٹھنڈے تازہ پانی کی بہتی لہروں میں سے چھینٹے اڑاتے مجھے جسکے سنگ گزرنا تھا،کوئ تھا … More